شہبازشریف بند کمرے میں بیٹھ کر بولنا آسان ہے۔

شہبازشریف بند کمرے میں بیٹھ کر بون سائن کرنے کا وعدہ کرتے ہیں اور میڈیا میں آکر بیان بدل لیتے ہیں نون لیگ نواز شریف کی صحت سے فٹبال میچ کھیل رہی ہے معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا جوابی وار کہا جن لوگوں نے فرضوں کے بعد پاکستان کو گروی رکھ دیا وہ آج رائیونڈ کا محل گروی رکھنے کو تیار نہیں کا نام ایک کے ذکر کیا سزا ڈوگھ شریف صاحب نے جو سمری کی ہے وہ بھی غلط کیا نہ بتائے گا بات کیا اس تضاد ہے

آپ کمروں میں بیٹھے انٹرمیڈیٹ بورڈ کی کمیٹی پر کرتے ہیں میڈیا میں جلا کے غلط بیانی کرتے ہیں لاتعداد ہے اس کا نام دے رہے ہیں وہ آپ کو کرکے گئی ہے آپ کو جرمانے دی ہے وہ تمام عورتوں سے بہتر نہیں وہ تو مت بولو کے ترجمان اور آپ کی قیادت کی صحت کو فٹبال سمجھ گئے کوئی ایک طرف کئی بار تو دوسری طرف مارتا ہے مسیج شریف کو حکومت میں علاج کے لیے باہر جانے کی مشروط اجازت دیں تو شہباز شریف چھوٹی بانٹ دینے پر بھی تیار ہوگئے

لیکن نواز شریف نے پھر انکار کردیا اور کہا عدالت سے رجوع کرے مسلم لیگ نون کے اجلاس کی اندرونی کہانی اندرونی کہانی کا پتہ چلالیا مسلم لیگ نون کے مشاورتی اجلاس میں شہباز شریف نے بتایا کہ بھائی کی زندگی سے بڑھ کر کچھ نہیں میں بانس بننے کو تیار تھا لیکن میاں صاحب نہیں مانی اور کہا ہمیں عدالت سے رجوع کرنا چاہیے اجلاس میں مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ پر بھی بات ہوئی لیگی ارکان کا کہنا تھا کہ

اور ایسے دھرنوں سے حکومتیں نہیں جاتی نیوز پیپر لاہور ولاس اسپتال لے جانے میں کچھ لوگوں نے ان کی مدد کی شہباز شریف نے ان کو درد دل رکھنے والا کہ آپ اور ان کے لئے دعائیں بھی کی یہ خیر خواہ کون تھے صحافیوں کے بار بار سوال پر بھی میاں شہباز شریف نے کھل کر کچھ نہ بتایا کچھ

Leave a Reply