مقبوضہ کشمیر : بھارتی فوجیوں نے گزشتہ ماہ اکتوبر میں 10 کشمیریوں کو شہید کیا

مقبوضہ کشمیر : بھارتی فوجیوں نے گزشتہ ماہ اکتوبر میں 10 کشمیریوں کو شہید کیا

سرینگر2 نومبر مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں نے اپنی ریاستی دہشت گردی کی جاری کارروائیوں کے دوران گزشتہ ماہ اکتوبر میں 10 کشمیریوں کو شہید کیا۔کشمیر میڈیا سروس کے ریسرچ سیکشن کی طرف سے آج جاری کئے گئےاعدادوشمار کے مطابق ان میں سے ایک نوجوان کو جعلی مقابلے میں شہید کیاگیا۔

اس عرصے کے دوران بھارتی فوجیوں اور پولیس اہلکاروں کی طرف سے پرامن مظاہرین پر گولیوں، پیلٹ گنز اور آنسو گیس کے بے دریغ استعمال سے 57 افرادشدیدزخمی جبکہ 67 شہریوں کو گرفتار کیا جن میں سے بیشتر حریت کارکن اور نوجوان شامل تھے ۔بھارتی فوجیوں نے اس عرصے کے دوران تلاشی اور محاصرے کی کارروائیوں کے دوران زبردستی گھروں میں داخل ہو کر 30 خواتین کی آبروریزی یا بے حرمتی کی اور 3 گھروں کو نقصان پہنچایا۔قابض انتظامیہ نے 5اگست کے بعد سے لوگوں کو سرینگر کی تاریخی جامع مسجد ،درگاہ دستگیر صاحب اور دیگر بڑی مساجد میں لوگوں کو نماز جمعہ ادا کرنے کی اجازت نہیں دی۔

یاد رہے کہ گزشتہ ماہ مقبوضہ علاقے میں بھارتی خفیہ ایجنسیوں نے 12 کے قریب غیر کشمیری مزدوروں اور ڈرائیوروں کو قتل کردیا۔ادھر نامعلوم مسلح افراد نے ضلع کولگام کے علاقے بونی گام میں دو مسافر گاڑیوں کو نذر آتش کردیا جس میں سے ایک گاڑی بی جے پی کے مقامی لیڈر کی تھی۔بھارتی فوجیوں نے علاقے کی ناکہ بندی کر کے تلاشی کی کارروائی شروع کر دی ہے.

نیوزالرٹمقبوضہ کشمیر سوپور میں بھارتی فوج کا حریت پسند نوجوان کو ہتھیاروں سمیت گرفتار کرنے کا دعویٰ ، قابض فوج کے مطابق گرفتار نوجوان کی شناخت بطور دانش ساکن اولڈ ٹاؤن بارہمولہ ہوئی ہے اور اسکا تعلق عسکری تنظیم لشکر طیبہ کے ساتھ ہےمقبوضہ وادی میں غیر ریاستی افراد کی بھارتی ایجنسیوں کے ہاتھوں متواتر ہلاکتوں کے بعد آج 131 غیر کشمیری مزدور کشمیر چھوڑ کر بھارت واپس جا رہے ہیں.

Leave a Reply