کوئی سزا سنانی ہو تو سنا سکتے ہو گستاخ نگاہوں نے آج پھر تمہارا خواب دیکھا ہے۔

میں دیں رہا تھا سہارے تو اک ہجوم میں تھا جو گر پڑا تو سبھی راستہ بدلنے لگے نا مارتے اور مجھے اور نا جینے… Read More »کوئی سزا سنانی ہو تو سنا سکتے ہو گستاخ نگاہوں نے آج پھر تمہارا خواب دیکھا ہے۔